728x90 AdSpace

  • Latest News

    250x250 AdSpace

    Woh Jo Dawedar Hai Shehr Me Keh Subhi Ka Nabz Snash Hun






    وہ جو دعویدار ھے شہر میں کہ سبھی کا نبض شناس ھوں

    کبھی آ کے مجھ سے تو پوچھتا کہ میں کس کے غم میں‌اداس ھوں


    یہ مری کتاب حیات ھے اسے دل کی آنکھ سے پڑھ ذرا

    میں ورق ورق ترے سامنے ترے روبرو ترے پاس ھوں


    یہ تری امید کو کیا ھوا کبھی تو نے غور نہیں ‌کیا

    کسی شام تو نے کہا تو تھا تری سانس ھوں تری آس ھوں


    یہ تری جدائی کا غم نہیں کہ یہ سلسلے تو ھیں‌ روز کے

    تری ذات اس کا سبب نہیں کئی دن سے یونہی اداس ھوں


    کسی اور کی آنکھ سے دیکھ کر مجھے ایسے ویسے لقب نہ دے

    ترا اعتبار ھوں جان من نہ گمان ھوں نہ قیاس ھوں
    • Blogger Comments
    • Facebook Comments

    0 comments:

    Post a Comment

    Your feedback is always appreciated. We will try to reply to your queries as soon as time allows.
    Note:
    1. Make sure to click the "Subscribe By Email" link below the comment to be notified of follow up comments and replies.
    2. Please "Do Not Spam" - Spam comments will be deleted immediately upon our review.
    3. Please "Do Not Add Links" to the body of your comment as they will not be published.

    Item Reviewed: Woh Jo Dawedar Hai Shehr Me Keh Subhi Ka Nabz Snash Hun Rating: 5 Reviewed By: Saira Ali
    Scroll to Top